Archive

Posts Tagged ‘1975 معا ہدہ دہلی’

Farooq Rehmani pays tribute to GM Bulla on his 43th anniversary

February 15, 2018 Leave a comment

Ghulam Muhammad Bulla,Central Jail Srinagar,Kashmir Conflict,Bulla,torture,killing,arrest,Sopore,jkpl,

ISLAMABAD: The Chairman of Jammu and Kashmir Peoples Freedom League, Muhammad Farooq Rehmani, has eulogized the sacrifices and services of martyred freedom leaders, Ghulam Muhammad Bulla , on the eve of his martyrdom anniversary.

Muhammad Farooq Rehmani in a statement issued in Islamabad said i Ghulam Muhammad Bulla was a young freedom-fighter of 1970s, when he was tortured to death by the Indian police at Srinagar Central Jail during midnight of February 14 and 15 in 1975. He said that immediately after this heinous crime police in the dead of night shifted his dead body to Sopore, where he was buried before dawn.

Read more…

Advertisements

سال۔1975 میں غلام محمد بلہ کی شہادت نے جدوجہد آزادی کا چراغ روشن کیا۔۔ فاروق رحمانی

February 14, 2012 Leave a comment

اسلام آباد فروری14/ 2012 :جموں وکشمیرپیپلز فریڈم لیگ کے چئیرمین محمد فاروق رحمانی نے غلام محمد بلہ شہید کے37ویں یوم شہادت پر اپنے خراج عقیدت کے پیغام میں کہا ہے کہ غلام محمد بلہ کو 1975ء کے معاہدہ دہلی کے خلاف عوامی مظاہروں میں شامل ہوکر اور عوام کو اصل حقائق سے آگاہ کرنے کے جرم میں موت کا پیالہ پینا پڑا ۔

محمد فاروق رحمانی نے کہا کہ غلام محمد بلہ ایک بہادر اور مخلص نوجوان تھا جس کا سینہ آزادی کے جذبات سے معمور تھا۔ اس کی شہا دت سے 1975ء سے جدو جہد آزادی کا جو چراغ روشن ہوا تھا اس کی روشنی سے آنے والی دہائیوں میں کشمیری نوجوانوں نے عظیم الشان قربانیاں پیش کیں ۔
یاد رہے کہ غلام محمد بلہ شہید کو 1975 میں فروری کے دوسرے ہفتے میں سوپور میں اندرا عبداللہ معاھدے کے خلاف عوامی مظاہروں کی رہنما ئی کرتے ہوئے پولیس نے گرفتار کیا تھا بعد میں ان پر پہلے مقامی تھا نے میں پولیس تشدد کیا گیا اس کے بعد سنٹرل جیل سری نگر میں وہ 14اور15 فروری کی درمیانی رات کو پولیس تشدد کی وجہ سے شہید ہو گئے ۔مرحوم کی میت کو رات کے اندھیرے میں سوپور میں پہنچا یا گیا جہاں پولیس کے کڑے پہرے میں وہ دفن کئے گئے۔اس سانحہ کے خلاف دوسرے روز وادی بھر میں ہڑتال اور مظاہرے ہوئے جن کا سلسلہ کئی روز تک جاری رہا ۔عوام نے شہید بلہ کے قتل کئے جانے کے واقعے کی عدالتی تحقیقات کا مطالبہ کیا اور حکومت نے بھی یہ وعدہ کیا کہ اس واقعے کی تحقیقا ت کی جائے گی لیکن آج تک سنٹرل جیل کے اندر کا یہ واقعہ شہادت دبایا گیا ہے۔1975ء کی تحریک کے مظاہروں کے دوران میں اس وقت کی وزیر اعظم ھند اور شیخ محمد عبداللہ کے دوران میں ایک معاھدہ ہوا جس کی رو سے کانگریس پارٹی نے ریاست کا اقتدار شیخ محمد عبداللہ اور ان کے سا تھیوں کو منتقل کیااور کچھ وقت کے بعد محاذ رائے شماری کو ختم کر کے نیشنل کانفرنس کو دوبارہ قائم کیا گیالیکن کشمیری عوام ان فیصلوں سے مطمئن نہ ہوئے ۔ انہوں نے 28فروری1975ء کو اندارا عبداللہ معاہدے کے خلاف اس وقت کے وزیر اعظم پاکستان ذوالفقار علی بھٹو شہید کی اپیل پر ایک بے مثال ریاست گیر ہڑتال کی اور معا ہدے کو رد کرتے ہوئے حق خود ارادیت کی تحریک جاری رکھنے کا عہد کیا۔